دلچسپ و عجیب

69 سالہ شخص کی اپنی ہی 18 سالہ سوتیلی بیٹی سے شادی

شیئر کیجئے

لندن: دس سال قبل برطانیہ میں ایک 18 سالہ لڑکی نے اپنے سوتیلے باپ سے شادی کرلی تھی جس پر معاشرے میں ان پر خوب لعن طعن کی گئی اور ان کی شادی سماجی سطح پر آج تک متنازعہ خیال کی جاتی ہے۔ گزشتہ دنوں اپنی شادی کی 10ویں سالگرہ پر اس لڑکی نے پہلی بار اس متنازعہ رشتے پر زبان کھول دی ہے۔

میل آن لائن کے مطابق 28 سالہ سارا اس وقت 18 سال کی تھی جب اس نے اپنے 69 سالہ سوتیلے باپ ڈیوڈ سے شادی کی۔ چینل فائیو سے گفتگو کرتے ہوئے اس نے بتایا ہے کہ ”میں ڈیوڈ سے پہلی بار اس وقت ملی جب اس کی میری ماں سے شادی ہوئی اور ہم تقریب میں شرکت کیلئے گئے۔ اس وقت میں 14سال کی تھی۔ میری ماں سے اس کی شادی کے بعد ہماری دوستی ہو گئی۔ یہ ایک فطری دوستی تھی اور ہم ایک دوسرے کی صحبت سے لطف اندوز ہوتے تھے۔ جب ڈیوڈ اور میری ماں کی طلاق ہو گئی تو ہماری دوستی محبت میں بدل گئی۔“

رپورٹ کے مطابق سارا کے خاندان اور لوگوں کا موقف ہے کہ سارا کی والدہ اور ڈیوڈ کی طلاق سارا کی وجہ سے ہی ہوئی تھی۔ اس نے ڈیوڈ کی ماں سے شادی کے دوران ہی ڈیوڈ سے تعلقات استوار کر لیے تھے۔ جب سارا نے ڈیوڈ سے شادی کی تو فیملی نے اس سے قطع تعلق کرلیا۔

سارا کا کہنا ہے کہ ”ڈیوڈ اور میری ماں کی طلاق سے قبل ہمارے درمیان صرف دوستی تھی۔ ہماری شادی کو دس سال ہوگئے ہیں۔ ہمارے دو جڑواں بچے بھی ہیں۔ اگرچہ اب ہمارے ازدواجی رشتے میں رومانویت باقی نہیں رہی تاہم میں پھر بھی اپنے شوہر کے ساتھ بہت خوش ہوں۔ مجھے اپنے انتخاب پر کوئی پچھتاوا نہیں ہے‘‘۔

loading...

متعلقہ مضامین

Close
Close