دلچسپ و عجیب

افغان خطاط نے دو برس کی محنت کے بعد سونے کے پاؤڈر تحریر کردہ قرآنِ کریم کا نسخہ تیار کرلیا

شیئر کیجئے

کابل: افغان خطاطی کے ماہرین نے ریشم کے کپڑے اور سونے کے پاؤڈر سے تحریر کردہ قرآنِ کریم دو برسوں کی محنت کے بعد تیار کرلیا ہے اور رمضان المبارک کی مناسبت سے عوام کی زیارت کیلئے پیش کردیا۔

جب زندگی میں کسی کام کو پایا تکمیل تک پہچانے کا عزم ہو تو کڑی محنت سے منزل ضرور مل جاتی ہے۔ ایسا ہی افغانستان میں ہوا جہاں ریشم اور سونے سے تیار کردہ نہایت خوبصورت قرآن شریف نمائش کیلئے پیش کردیا گیا۔

دنیا بھر میں اپنی نوعیت کے انوکھے ترین نسخوں میں شامل اس شہہ پارے کی فیروز کوہ انسٹیٹیوٹ میں نمائش ہوئی، جہاں جوق در جوق لوگ اس خوبصورت شاہکار کو دیکھنے کیلئے آرہے ہیں۔

افغان خطاطی محمد تمیم کے مطابق قرآنِ کریم کے ہر صفحے کی تیاری میں ایک ہفتہ لگا ہے۔ اس کا وزن 8.6 کلوگرام ہے، جبکہ صفحات کی تعداد 610 ہے۔ اس میں استعمال کردہ آرائش و زیبائش کا تعلق انیسویں صدی کے کام سے ہے۔ اس قرآنِ کریم کی تیاری پر 305 میٹر ریشم کا کپڑا استعمال کیا گیا ہے۔

قرانِ کریم منصوبے کو عمل پذیر دینے والے ماہر محمد تمیم صاحب زادے کا کہنا ہے کہ قرآنِ کریم کے ریشم سے بنے صفحات پر کام ایک کٹھن مرحلہ تھا مگر مستقل محنت سے وہ اپنے انوکھے خیال کو پایہ تکمیل تک پہچانے میں کامیاب ہوگئے۔

loading...

متعلقہ مضامین

Close
Close