دلچسپ و عجیب

فحش فلموں کی اداکارہ نے دنیا کی پہلی فحاشی کی یونیورسٹی کھول لی

بوگوٹا: جنوبی امریکہ کے ملک کولمبیا کی فحش فلموں کی ایک اداکارہ نے دنیا کی پہلی فحاشی کی یونیورسٹی کھول لی ہے۔

میل آن لائن کے مطابق اس اداکارہ کا نام ’’امرانتا ہینک‘‘ ہے جس نے کولمبیا کے شہر میڈیلٹن میں یہ یونیورسٹی کھولی ہے۔ اس یونیورسٹی میں وہ فحش فلم انڈسٹری میں کام کرنے کے خواہش مند لڑکے لڑکیوں کو نہ صرف اس شرمناک کام کی تربیت دے گی بلکہ انہیں یہ بھی بتائے گی کہ وہ کس طرح جعلی اور اداکاروں کا استحصال کرنے والے پروڈیوسرز کا پتا چلا سکتے ہیں اور ان سے بچ سکتے ہیں۔

اداکارہ (جو ماضی میں صحافی رہ چکی ہے) نے یہ ادارہ ایک شراب خانے کی عمارت میں بنایا ہے جہاں اس کے ساتھ فحش فلموں کے اداکار ریمن نومر بھی اس کے ساتھ لڑکے لڑکیوں کو تربیت دیں گے۔

رپورٹ کے مطابق امرانتا ہینک کے صحافت چھوڑ کر فحش فلموں کی اداکارہ بننے کی کہانی بھی دلچسپ ہے۔ اس نے اپنے پسندیدہ فٹبال ٹیم کی جیت پر شرط لگائی تھی۔ شرط یہ تھی کہ اس اداکارہ کا کہنا تھا کہ اس کے پسندیدہ کلب کی ٹیم نیشنل لیگ میں جیتے گی اور اگر وہ ٹیم نہ جیت سکی تو وہ فحش میگزین ’SOHO‘ کیلئے برہنہ فوٹوشوٹ کروائے گی۔ اس کی ٹیم ہار گئی اور اسے برہنہ فوٹوشوٹ کروانا پڑ گیا۔ اس کی فحش تصویر اس میگزین کے سرورق پر شائع ہوئی جہاں سے اسے فحش فلموں میں اداکاری کی آفرز آنے لگیں اور اس نے صحافت چھوڑ کر اس شرمناک انڈسٹری میں کام شروع کردیا۔

loading...

متعلقہ مضامین

Close
Close