کاروبار

سوزوکی مہران کے خاتمے کے بعد ’’آلٹو‘‘ پیش کیے جانے کا امکان

شیئر کیجئے

کراچی: پاک سوزوکی موٹرز کی جانب سے 800 سی سی مہران کی تیاری کا سلسلہ ختم کرنے کے بعد آئندہ ہفتے سے 660 سی سی ’آلٹو‘ کی کمرشل پیداوار کے آغاز اور اسے 12 سے 14 اپریل تک کراچی میں ہونے والے آٹو پارٹس شو میں پیش کیے جانے کا امکان ہے۔

ڈان نیوز کے مطابق کمپنی کی جانب سے پارٹس کی خریداری کیلئے وینڈرز (سامان کی خرید و فروخت کرنے والوں) کو شیڈول دیا جا چکا ہے اور اس سلسلے میں کئی آرڈرز بھی موصول ہوچکے ہیں جبکہ ذرائع کا کہنا ہے کہ پاک سوزوکی موٹرز کی جانب سے 660 سی سی ’آلٹو‘ کو پاکستان آٹو پارٹس شو میں پیش کیے جانے کا امکان ہے جو 12 سے 14 اپریل تک کراچی میں ہوگا۔

رپورٹ کے مطابق ابھی تک یہ واضح نہیں ہے کہ نئی ’آلٹو‘ میں مقامی طور پر تیار کردہ کون سے پرزہ جات لگائے جائیں گے البتہ ’وینڈرز‘ کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ ابتدائی طور پر 50 فیصد مقامی پارٹس لگائے جائیں گے اور پھر آئندہ سالوں میں پیداوار میں اضافے کیساتھ ساتھ مقامی طور پر پارٹس کی تیاری میں بھی اضافہ کیا جائے گا جس کا مطلب یہ ہے کہ ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں کمی کا سلسلہ برقرار رہا تو نئی کار کی قیمت بھی زیادہ ہو گی۔

یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ مقامی پیداوار میں اضافے کے متعدد دعوﺅں کے باوجود ایکسچینج ریٹ میں کمی کے باعث جنوری 2018 کے بعد سے اب تک گاڑیوں کی قیمت میں کئی مرتبہ اضافہ کیا جاچکا ہے۔پاک سوزوکی موٹر کا یہ بھی کہنا ہے کہ کمپنی نے 660 سی سی ’آلٹو‘ کے پارٹس اور دیگر لوازمات کی تیاری کیلئے مہران کا سامان فروخت کرنے والے 80 فیصد وینڈرز کو ایڈجسٹ کردیا ہے جن کے کاروبار میں نئی گاڑی کی مقامی سطح پر تیاری اور فروخت کیساتھ ساتھ اضافہ ہوگا۔

loading...

متعلقہ مضامین

Close
Close