ادبشاعری

اسے کرنا ہی نہیں تھا اعتبار مجھ پہ

شیئر کیجئے

اسے کرنا ہی نہیں تھا اعتبار مجھ پہ
میرے خلوص میں وگرنہ کمی تو نہ تھی

وہ لوٹ گیا مجھے قصور وار ٹھہرا کہ
اسے لوٹنا ہی تھا بات وگرنہ اتنی تو نہ تھی

میرے ہمدم چلنا اسے گوارہ ہی نہ تھا
میری ہمنوائی وگرنہ اتنی بری تو نہ تھی

زمانے کے خاطر اسے آنا ہی تھا
میری وگرنہ اسے اتنی فکر تو نہ تھی

رسم دنیا نبھانی تھی اسے
میرا ہونا وگرنہ اتنا ضروری تو نہ تھا

loading...

اسماء طارق

اسماء طارق کا تعلق گوجرانوالہ سے ہے۔ موصوفہ ماسٹرز کی طالبعلم ہیں اور سوشل ڈولپمنٹ ایشوز پر لکھتی ہیں۔

متعلقہ مضامین

Close
Close